Ek Ajnabi Haseen ghazal

mohabbat ghazal

mohabbat ghazal

Ek  Ajnabi Haseen Jo Aankhon Ko Bhaa Gaya Hai
Aankhon Ki  Raah Se Wo Dil Mein Sama Gaya Hai


Dil  Par  Likha  Hai Mere  Us Shokh  Ka Fasana
Jis Se    Mera  Taaruf   Hai  Sirf  Ghaaibana


Dekha  Nahi Hai Us Ko  Aur Na  Kabhi Mili Hun
Lagta Hai Phir Bhi  Jaise Barson Se Janti Hun


Ek  Ajnabi Haseen Jo Aankhon Ko Bhaa Gaya Hai
Jis Ne Kisi Ko Dhoonda Main Us Nazar Ke Sadqe


Jis Ko Khabar Nahi Hai  Us Bekhabar  Ke Sadqe
Ye  Waqt Us Ke  Darr Pe Le Jaaye Ga  Kabhi To


Bechain  Hasraton Ko  Chain Aaye Ga  Kabhi To
Ek  Ajnabi Haseen Jo Aankhon Ko Bhaa Gaya Hai
Aankhon Ki  Raah Se Wo Dil Mein Sama Gaya Hai..!!!!

2 lines popular shayari in urdu

2 lines popular shayari in urdu

2 lines popular shayari in urdu

 2 lines popular shayari in urdu

ٹکرا گئی وہ مجھ سے کتابیں لئے ہوئے

پھر میرا دل اور اُسکی، کتابیں بکھر گئیں

Takra Gayee Wo Mujh se

Kitabe’n Liye Huye

Fir Mera Dil Or Uski Kitabe’n

Bikhar Gayee

2 line Aamal status in urdu

Amaal shayari urdu

غلط ” پاس ورڈ ” سے تو موبائل بھی نہیں کھلتا

غلط اعمال سے ” جنت ” کا دروازہ کیسے کھلے گا ؟؟

Galat Password Se To Mobile

Bhi Nahi Khulta

Galat Aamal Se Jannat Ka

darwaza kaise khulega

Mazhad 2 line Status

شــــــــکر ہے کہ پرنـــــــــدوں کو

نہیـــــــں پتہ ان کا مـــــذہب

ورنہ….

ہر روز آسمــــان سے خــــون کی بارش ہوتی

shukr Hai Ke Parindo Ko Nahi Pata inka mazhab kya hai

Warna…

Har Roz Asman se khoon ki barish hoti

urdu shayari

best hindi status – Bharosa Khud Pe Rakho

best hindi status

*भरोसा खुद पर रखो*

                 *तो ताकत बन जाती है*

*और दूसरों पर रखो तो*

                 *कमजोरी बन जाती है…!*

*आप कब सही थे…*

                *इसे कोई याद नहीं रखता।*

*लेकिन आप कब गलत थे…*

                *इसे सब याद रखते हैं।*


*पृथ्वी पर कोई भी व्यक्ति ऐसा नहीं है”*

   *”जिसको समस्या न हो”*

           *”और”*

*”पृथ्वी पर कोई समस्या ऐसी नहीं है”*

*”जिसका कोई समाधान न हो…*


*मंजिल  चाहें  कितनी भी  ऊँची  क्यों न हो,  रास्ते  हमेशा  पैरों  के  नीचे  ही  होते है।*

☀☀ *Good Morning* ☀☀

2 line shayari

2 Lines Urdu Shayari

2 line shayari

  1. مجھے خاک بھی سمجھو تو کوئی بات نہی

یہ بھی اڑتی ہے تو آنکھوں میں سما جاتی
ہے .

mohabbat urdu shayari

ﮨﺰﺍﺭ ﻟﻔﻆ ﺟﻮﮌﻭں____ﮐﺌﯽ ﺻﻔﺤﮯ ﺳﯿﺎﻩ ﮐﺮﻭں۔۔
🇮
ﻟﯿﮑﻦ ﺩﻝ ﮐﯽ ﺑﺎﺗﯿﮟ ﺩﻝ ﻣﯿﮟ ﮨﯽ ﺭﻩ ﺟﺎﺗﯽ ﮨﯿں۔۔

Dil Ki Baat Urdu Shayari

*ہزاروں نا مکمل حسرتوں کے بوجھ تلے.!!!*
🇮
*یہ جو دل دھڑکتا ہے ظالم کمال کرتا ہے.!!!*

pyar ka izhar

ترے خاموش ہونٹوں کی ہو چاہے کچھ بھی مجبوری——–

تری آنکھیں تو کہتی ہیں تجھے مجھ سے محبت ہے—-

Dard Bhari Shayari urdu

اپنوں کی محبت میں ملاوٹ تھی اس قدر

میں تنگ آ کر دشمن کو منانے چلا گیا ۔۔۔

Dosti shayari

Dosti shayari – Usool todna mana hai

Dosti shayari

स्कूलो  में लिखा होता है

असूल तोडना मना है

बागों में लिखा होता है

फूल तोडना मना है

खेलों  मैं लिखा होता है

रूल  तोडना मना है

काश

रिश्ते  परिवार  दोस्ती में

भी यह लिखा होता कि

साथ  छोङना मना है

Have A Nice Day

Allama Iqbal shayari

Allama Iqbal shayari – na wo ishq me rahe garmiya’n

Allama Iqbal shayari

کبھی اے حقیقت منتظر، نظر آ لباسِ مجاز میں

کہ ہزاروں سجدے تڑپ رہے ہیں مری جبینِ نیاز میں

تو بچا بچا کہ نہ رکھ اسے ، ترا آئینہ ہے وہ آئینہ

جو شکستہ ہو تو عزیز تر ہے نگاہِ آئینہ ساز میں

نہ وہ عشق میں رہیں گرمیاں، نہ وہ حسن میں رہیں شوخیاں

نہ وہ غزنوی میں تڑپ رہی، نہ وہ خم ہے زلفِ ایاز میں

جو میں سربسجدہ ہوا کبھی ، تو زمیں سے آنے لگی صدا

تیرا دل تو ہے صنم آشنا، تجھے کیا ملے گا نماز میں

علامہ اقبال

Urdu Ghazals

Urdu Ghazals – suna hai log use ankh bhar ke dekhte hai

Urdu Ghazals(Faraz Sahab)

سنا ہے لوگ اُسے آنکھ بھر کے دیکھتے ہیں

تو اس کے شہر میں‌ کچھ دن ٹھہر کے دیکھتے ہیں
سنا ہے ربط ہے اس کو خراب حالوں سے

سو اپنے آپ کو برباد کر کے دیکھتے ہیں
سنا ہے درد کی گاہک ہے چشمِ ناز اس کی

سو ہم بھی اس کی گلی سے گزر کے دیکھتے ہیں
سنا ہے اس کو بھی ہے شعروشاعری سے شغف

تو ہم بھی معجزے اپنے ہنر کے دیکھتے ہیں
سنا ہے بولے تو باتوں سے پھول جھڑتے ہیں

یہ بات ہے تو چلو بات کر کے دیکھتے ہیں
سنا ہے رات اسے چاند تکتا رہتا ہے

ستارے بام فلک سے اتر کے دیکھتے ہیں
سنا ہے دن کو اسے تتلیاں ستاتی ہیں

سنا ہے رات کو جگنو ٹھہر کے دیکھتے ہیں
سنا ہے حشر ہیں‌ اس کی غزال سی آنکھیں

سنا ہے اس کو ہرن دشت بھر کے دیکھتے ہیں
سنا ہے رات سے بڑھ کر ہیں‌ کاکلیں اس کی

سنا ہے شام کو سائے گزر کے دیکھتے ہیں
سنا ہے اس کی سیاہ چشمگی قیامت ہے

سو اس کو سرمہ فروش آہ بھر کے دیکھتے ہیں
سنا ہے جب سے حمائل ہیں اس کی گردن میں

مزاج اور ہی لعل و گوہر کے دیکھتے ہیں
سنا ہے اس کے بدن کی تراش ایسی ہے

کہ پھول اپنی قبائیں کتر کے دیکھتے ہیں
سنا ہے اس کے لبوں سے گلاب جلتے ہیں

سو ہم بہار پہ الزام دھر کے دیکھتے ہیں
سنا ہے آئینہ تمثال ہے جبیں اس کی

جو سادہ دل ہیں‌ اسے بن سنور کے دیکھتے ہیں
سنا ہے چشمِ تصور سے دشتِ امکاں میں

پلنگ زاویے اس کی کمر کے دیکھتے ہیں
وہ سرو قد ہے مگر بے گل مراد نہیں

کہ اس شجر پہ شگوفے ثمر کے دیکھتے ہیں
بس اک نگاہ سے لوٹا ہے قافلہ دل کا

سو رہ روان تمنا بھی ڈر کے دیکھتے ہیں
سنا ہے اس کے شبستاں سے متُّصل ہے بہشت

مکیں‌ اُدھر کے بھی جلوے اِدھر کے دیکھتے ہیں
کسے نصیب کہ بے پیرہن اسے دیکھے

کبھی کبھی در و دیوار گھر کے دیکھتے ہیں
رکے تو گردشیں اس کا طواف کرتی ہیں

چلے تو اس کو زمانے ٹھہر کے دیکھتے ہیں
کہانیاں ہی سہی ، سب مبالغے ہی سہی

اگریہ  خواب ہے تعبیر کر کے دیکھتے ہیں
اب اس کے شہر میں‌ٹھہریں کہ کوچ کر جائیں

فراز آؤ ستارے سفر کے دیکھتے ہے