Allama Iqbal shayari

Allama Iqbal shayari – na wo ishq me rahe garmiya’n

Allama Iqbal shayari

کبھی اے حقیقت منتظر، نظر آ لباسِ مجاز میں

کہ ہزاروں سجدے تڑپ رہے ہیں مری جبینِ نیاز میں

تو بچا بچا کہ نہ رکھ اسے ، ترا آئینہ ہے وہ آئینہ

جو شکستہ ہو تو عزیز تر ہے نگاہِ آئینہ ساز میں

نہ وہ عشق میں رہیں گرمیاں، نہ وہ حسن میں رہیں شوخیاں

نہ وہ غزنوی میں تڑپ رہی، نہ وہ خم ہے زلفِ ایاز میں

جو میں سربسجدہ ہوا کبھی ، تو زمیں سے آنے لگی صدا

تیرا دل تو ہے صنم آشنا، تجھے کیا ملے گا نماز میں

علامہ اقبال

aaj ka vichar

Ishq Qatil Se ..Allama Iqbal

Ishq Qatil Se Bhi Maqtool Se Hamdardi Bhi

Ye Bata Kis Se Mohabbat Ki Jaza Mange Ga, 

Sajda Khaliq Ko Bhi Iblees Se Yarana Bhi, 

Hashr Me Kisse Aqeedat Ka Sila Mange Ga

Dr. Allama Iqbal