Hal e dil shayari in urdu

بیٹھے بیٹھائے حال دل زار کھول گیا

میں آج اس کے سامنے بیکار کھول گیا

مٹی میں کیوں ملاتے ہو محنت رفو گروں

اب تو لباس جسم کا ہر تار کھول گیا

کاسے کی ایک دوکان پر لوگوں کی بھیڑ تھی

ہے کون کتنا شھر میں خودار کھول گیا

دشوار کام تھا تیرے غم کو سمیٹنا

میں خود کو باندھنے میں کئی بار کھول گیا

منور رانا